Zara Sa Waqt Kahin Be Sabab Guzartay Hain

ذرا سا وقت کہیں بے سبب گزارتے ہیں

ذرا سا وقت کہیں بے سبب گزارتے ہیں

چلو یہ شام سر جوئے لب گزارتے ہیں

تو اک چراغ جہان دگر ہے کیا جانے

ہم اس زمین پہ کس طرح شب گزارتے ہیں

ہمارا عشق ہی کیا ہے گزارنے والے

یہاں تو نذر میں نام و نسب گزارتے ہیں

خراج مانگ رہی ہے وہ شاہ بانوئے شہر

سو ہم بھی ہدیۂ دست طلب گزارتے ہیں

سنا تو ہوگا کہ جنگل میں مور ناچتا ہے

ہم اس خرابے میں فصل طرب گزارتے ہیں

عرفان صدیقی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1552) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Irfan Siddiqui, Zara Sa Waqt Kahin Be Sabab Guzartay Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 69 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Irfan Siddiqui.