Main Wo Khushqismat Nahi Hoon

میں وہ خوش قسمت نہیں ہوں

اُس محبت کی یلغار

جس کے ہراول میں منافقت

اور میمنہ و میسرہ میں

بغض و حسد ہوں

اُس احترام کا اظہار

جو زبان پر پھسلتے ہوئے

اس کی نوک پر آتے آتے کند ہو جائے

اُن جذبوں کی پکار

جو خود غرضی کی تہوں سے ابھرے

اور اپنے عہد کے چہرے کوداغدار کردے

جس دل کو راس آ جائے

وہ خوش نصیب ہوتا ہے

کیونکہ اُسے دھڑکنے کے لیے

صرف ہوا کی ضرورت پڑتی ہے!

جمیل الرحمان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1830) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Jameel Ur Rahman, Main Wo Khushqismat Nahi Hoon in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 68 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Jameel Ur Rahman.