Tum Lab Tu Hilao

تم لب تو ہلاؤ

بہری ہے سماعت

یہاں لنگڑی ہے آواز

ٹھہرو مرے دمساز!

کس سمت سے آئے ہو

کدھر قصد ِ سفر ہے

ساکن ہو کسی دشت کے

یا شہر میں گھر ہے؟

کیوں آبلہ پا پھرتے ہو

یہ کیسا ہنر ہے؟؟

آوارہ ہو ،وحشی ہو کہ درویش ہو پیارے

تم کون ہو ؟

کچھ جینے کا احساس دلاؤ

اِس چُپ سے بھرے شہر میں

تم لب تو ہلاؤ!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!!

جمیل الرحمان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(263) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Jameel Ur Rahman, Tum Lab Tu Hilao in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 68 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Jameel Ur Rahman.