Samajh Mein Zindagi Aaye Kahan Se

سمجھ میں زندگی آئے کہاں سے

سمجھ میں زندگی آئے کہاں سے

پڑھی ہے یہ عبارت درمیاں سے

یہاں جو ہے تنفس ہی میں گم ہے

پرندے اڑ رہے ہیں شاخ جاں سے

مکان و لا مکاں کے بیچ کیا ہے

جدا جس سے مکاں ہے لا مکاں سے

دریچہ باز ہے یادوں کا اور میں

ہوا سنتا ہوں میں پیڑوں کی زباں سے

تھا اب تک معرکہ باہر کا درپیش

ابھی تو گھر بھی جانا ہے یہاں سے

زمانہ تھا وہ دل کی زندگی کا

تری فرقت کے دن لاؤں کہاں سے

فلاں سے تھی غزل بہتر فلاں کی

فلاں کے زخم اچھے تھے فلاں کے

جون ایلیا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1943) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Jaun Elia, Samajh Mein Zindagi Aaye Kahan Se in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 195 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Jaun Elia.