Social Poetry of Jaun Elia - Social Shayari

جون ایلیا کی معاشرتی شاعری

دل کی ہر بات دھیان میں گزری

Dil Ki Har Baat Dheyan Main Guzri

(Jaun Elia) جون ایلیا

حالت حال کے سبب حالت حال ہی گئی

Halat Hal Ke Sabab Halat Hal Hi Gayi

(Jaun Elia) جون ایلیا

چلو باد بہاری جا رہی ہے

Chalo Bad Bahari Ja Rahi Hai

(Jaun Elia) جون ایلیا

بے قراری سی بے قراری ہے

Be Qarari Si Be Qarari Hai

(Jaun Elia) جون ایلیا

بے دلی کیا یوں ہی دن گزر جائیں گے

Be Dili Kya Yun Hi Din Guzar Jayen Gay

(Jaun Elia) جون ایلیا

ایک ہی مژدہ صبح لاتی ہے

Aik Hi Musda Subah Lati Hai

(Jaun Elia) جون ایلیا

اے کوئے یار تیرے زمانے گزر گئے

Aay Koye Yaar Tairay Zmanay Guzar Gaye

(Jaun Elia) جون ایلیا

ابھی فرمان آیا ہے وہاں سے

Abhi Farman Aya Hai Wahan Say

(Jaun Elia) جون ایلیا

ابھی فرمان آیا ہے وہاں سے

Abhi Farman Aya Hai Wahan Say

(Jaun Elia) جون ایلیا

دل نے کیا ہے قصد سفر گھر سمیٹ لو

Dil Ne Kya Hai Qasad Safar Ghar Samait Lo

(Jaun Elia) جون ایلیا

دل نے کیا ہے قصد سفر گھر سمیٹ لو

Dil Ne Kya Hai Qasad Safar Ghar Samait Lo

(Jaun Elia) جون ایلیا

ہم رہے پر نہیں رہے آباد

Hum Rahay Par Nahi Rahay Abad

(Jaun Elia) جون ایلیا

ہم ترا ہجر منانے کے لیے نکلے ہیں

Hum Tra Hijar Mananay Ke Liye Niklay Hain

(Jaun Elia) جون ایلیا

ہجر کی آنکھوں سے آنکھیں تو ملاتے جائیے

Hijar Ki Aankhon Se Ankhen To Milatay Jaiye

(Jaun Elia) جون ایلیا

نہ ہوا نصیب قرار جاں ہوس قرار بھی اب نہیں

Nah -howa Naseeb Qarar Jaan Hawas Qarar Bhi Ab Nahi

(Jaun Elia) جون ایلیا

نہ کوئی ہجر نہ کوئی وصال ہے شاید

Nah Koi Hijar Nah Koi Wasaal Hai Shayad

(Jaun Elia) جون ایلیا

یادوں کا حساب رکھ رہا ہوں

Yaado Ka Hisaab Rakh Raha Hon

(Jaun Elia) جون ایلیا

ہم تو جیسے وہاں کے تھے ہی نہیں

Hum To Jaisay Wahan Ke Thay Hi Nahi

(Jaun Elia) جون ایلیا

ہمارے زخم تمنا پرانے ہو گئے ہیں

Hamaray Zakham Tamana Puranay Ho Gaye Hain

(Jaun Elia) جون ایلیا

مسند غم پہ جچ رہا ہوں میں

Masnad Gham Pay Jach Raha Hon Main

(Jaun Elia) جون ایلیا

لازم ہے اپنے آپ کی امداد کچھ کروں

Lazim Hai –apne Ap Ki Imdaad Kuch Karoon

(Jaun Elia) جون ایلیا

کوئی دم بھی میں کب اندر رہا ہوں

Koi Dam Bhi Main Kab Andar Raha Hon

(Jaun Elia) جون ایلیا

عجب اک طور ہے جو ہم ستم ایجاد رکھیں

Ajab Ik Tor Hai Jo Hum Sitam Ijaad Rakhen

(Jaun Elia) جون ایلیا

بد دلی میں بے قراری کو قرار آیا تو کیا

Bad Dili Main Be Qarari Ko Qarar Aaya To Kya

(Jaun Elia) جون ایلیا

Records 1 To 24 (Total 157 Records)

Social Shayari of Jaun Elia - Poetry of Social. Read the best collection of Social poetry by Jaun Elia, Read the famous Social poetry, and Social Shayari by the poet. Social Nazam and Social Ghazals of the poet. The best collection of Shayari by Jaun Elia online. You can also read different types of poetries by the poet including Social Shayari from different books of the poet.