Woh Jo Tha Woh Kabhi Mila Hi Nahi

وہ جو تھا وہ کبھی ملا ہی نہیں

وہ جو تھا وہ کبھی ملا ہی نہیں

سو گریباں کبھی سلا ہی نہیں

اس سے ہر دم معاملہ ہے مگر

درمیاں کوئی سلسلہ ہی نہیں

بے ملے ہی بچھڑ گئے ہم تو

سو گلے ہیں کوئی گلہ ہی نہیں

چشم میگوں سے ہے مغاں نے کہا

مست کر دے مگر پلا ہی نہیں

تو جو ہے جان تو جو ہے جاناں

تو ہمیں آج تک ملا ہی نہیں

مست ہوں میں مہک سے اس گل کی

جو کسی باغ میں کھلا ہی نہیں

ہائے جونؔ اس کا وہ پیالۂ ناف

جام ایسا کوئی ملا ہی نہیں

تو ہے اک عمر سے فغاں پیشہ

ابھی سینہ ترا چھلا ہی نہیں

جون ایلیا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(6142) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Jaun Elia, Woh Jo Tha Woh Kabhi Mila Hi Nahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 195 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Jaun Elia.