In Dinoon Shaam Aaise Aati Hai

ان دنوں شام ایسے آتی ہے

ان دنوں شام ایسے آتی ہے

موج خوں میں نہا کے جاتی ہے

ایک صحرا مجھے بلاتا ہے

ایک وحشت گلے لگاتی ہے

پہلے ہم دھوپ میں جھلستے تھے

اب تو یہ چھاؤں بھی جلاتی ہے

کتنی معصوم ہے وفا اپنی

بے وفائی ہنسی اڑاتی ہے

غیر کی بات اس سے کیوں پوچھی

اس کی سچائی اب رلاتی ہے

کتنے عشوے ہیں اک محبت کے

کتنے پہلو سے آزماتی ہے

ایک دن اعتبار ٹوٹا تھا

اب تو ہر چیز ٹوٹ جاتی ہے

خواب آنکھوں میں جب بھی آتا ہے

ایک تعبیر منہ چڑھاتی ہے

تیر کیسا تھا جانے اے خالدؔ

روح زخموں سے چھٹپٹاتی ہے

خالد مبشر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(915) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Khalid Mubashir, In Dinoon Shaam Aaise Aati Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 17 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Khalid Mubashir.