Libaas Yaar Ko Main Parah Parah Kya Karta

لباس یار کو میں پارہ پارہ کیا کرتا

لباس یار کو میں پارہ پارہ کیا کرتا

قبائے گل سے اسے استعارہ کیا کرتا

بہار گل میں ہیں دریا کے جوش کی لہریں

بھلا میں کشتئ مے سے کنارہ کیا کرتا

نقاب الٹ کے جو منہ عاشقوں کو دکھلاتے

تمہیں کہو کہ تمہارا نظارہ کیا کرتا

سنا جو حال دل زار یار نے تو کہا

طبیب مرتے ہوئے کاہے چارہ کیا کرتا

ہلال عید کا ہر چند ہو جہاں مشتاق

تمہاری ابروؤں کا سا اشارہ کیا کرتا

حقیقت دہن یار کھولتا کیوں کر

نہفتہ راز کو میں آشکارہ کیا کرتا

قدم کو پیچھے رہ خوفناک عشق میں رکھ

یہ پہلے دیکھ لے دل ہے اشارہ کیا کرتا

خم شراب سے مجھ مست نے نہ منہ پھیرا

کنار آب سے پیاسا کنارہ کیا کرتا

بہار تھی جو وہ گل چہرہ یار بھی ہوتا

اکیلے جا کے چمن کا نظارہ کیا کرتا

گداز موم سے ہر استخواں کو پاتا ہوں

پھر اور سوزش دل کا حرارہ کیا کرتا

بڑا ہی خوار علاقہ ہے گلشن الفت

مری طرح کوئی اس میں اجارہ کیا کرتا

شراب خلد کی خاطر دہن ہے رکھتا صاف

وضو میں ورنہ یہ زاہد غرارہ کیا کرتا

شکستہ دل نہ ہو اس بت کے ناز سے کیوں کر

سلوک شیشہ سے ہے سنگ خارا کیا کرتا

بہار گل میں پیالہ لگا لیا منہ سے

شراب پینے کو میں استخارہ کیا کرتا

فقیر کو نہیں درکار شان امیروں کی

سر برہنہ سر گوشوارہ کیا کرتا

بہار گل میں تھا جامہ سے باہر اے آتشؔ

نہ کرتا میں جو گریباں کو پارہ کیا کرتا

خواجہ حیدر علی آتش

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(4263) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Khwaja Haider Ali Aatish, Libaas Yaar Ko Main Parah Parah Kya Karta in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 133 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Khwaja Haider Ali Aatish.