Shoq Se Dil Ko Teh Tegh Nazar Honay Do

شوق سے دل کو تہ تیغ نظر ہونے دو

شوق سے دل کو تہ تیغ نظر ہونے دو

جس طرف اس کی طبیعت ہے ادھر ہونے دو

دل کی کیا اصل ہے پتھر بھی پگھل جائیں گے

اے بتو تم مرے نالوں میں اثر ہونے دو

غیر تو رہتے ہیں دن رات تمہارے دل میں

کبھی اس گھر میں ہمارا بھی گزر ہونے دو

ناصحو ہم تو خریدیں گے متاع الفت

تم کو کیا فائدہ ہوتا ہے ضرر ہونے دو

ولولے اگلی محبت کے کہاں سے لائیں

اور پیدا کوئی دل اور جگر ہونے دو

چھیڑنے کو مرے دربان کہا کرتے ہیں

ٹھہرو جلدی نہ کرو ان کو خبر ہونے دو

کیوں مزا دیکھ لیا دل کی کشش کا تم نے

ہم نہ کہتے تھے محبت میں اثر ہونے دو

اے شب وصل و شب عیش جوانی ٹھہرو

میں بھی ہم راہ تمہارے ہوں سحر ہونے دو

رنج و راحت ہے بشر ہی کے لیے اے جوہرؔ

وہ بھی دن دیکھ لیے یوں بھی بسر ہونے دو

لالہ مادھو رام جوہر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(358) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of LALA MADHAV RAM JAUHAR, Shoq Se Dil Ko Teh Tegh Nazar Honay Do in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 84 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of LALA MADHAV RAM JAUHAR.