Ab Ke Barsat To Ghar Kar Ke Hi Masmar Gayi

اب کے برسات تو گھر کر کے ہی مسمار گئی

اب کے برسات تو گھر کر کے ہی مسمار گئی

در کو روکا تھا تھپیڑوں میں کہ دیوار گئی

کیا سفر کس کا مکاں کیسی ہوا کس کا شجر

تیزیٔ پر گئی خس ریزیٔ منقار گئی

ہو گئے گوشہ نشیں گھر میں جو ہم خاک بسر

کون سی آبروئے کوچہ و بازار گئی

دائرے سارے دل و ذہن کے زنجیر بنے

چھن گئی روح عمل گردش پرکار گئی

کچھ زیادہ ہی پریشاں ہیں پلٹتی موجیں

درد میں ڈوبی ہوئی لے کوئی اس پار گئی

محشر بدایونی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1314) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mehshar Badayuni, Ab Ke Barsat To Ghar Kar Ke Hi Masmar Gayi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 69 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mehshar Badayuni.