Ae Ishq Is Qafas Se Mujhe Ab Rihayi Day

اے عشق اس قفس سے مجھے اب رہائی دے

اے عشق اس قفس سے مجھے اب رہائی دے

دیکھوں جدھر مجھے ترا جلوہ دکھائی دے

شہر شب فراق کے گہرے سکوت میں

اپنی صدا مجھے بھی کبھی تو سنائی دے

یاد حبیب مجھ کو بھی اب مجھ سے کر جدا

مجھ کو ہجوم درد میں میری اکائی دے

کب سے میں خامشی کے نگر میں مقیم ہوں

لیکن یہ کون ہے جو یہاں بھی سنائی دے

ظلمت زدوں کو جادہ و منزل کی کیا خبر

تاریک راستوں میں بھلا کیا سجھائی دے

قطرے میں موجزن ہے سمندر ہی ہر جگہ

اب وہ مجھے فراز افق تک رسائی دے

مقتل میں کیسے چھوڑ کے راہیں بدل گیا

یا رب کسی صنم کو نہ ایسی خدائی دے

نجمہ شاہین کھوسہ

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(216) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Najma Shaheen Khosa, Ae Ishq Is Qafas Se Mujhe Ab Rihayi Day in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 39 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Najma Shaheen Khosa.