Sawari Oont Ki Hai

سواری اونٹ کی ہے

اور میں شہر شکستہ کی

کسی سنساں گلی میں سر جھکائے

ہاتھ میں بد رنگ چمڑے کی مہاریں تھام کر

اس گھر کی جانب جا رہا ہوں

جس کی چوکھٹ پر

ہزاروں سال سے

اک غم زدہ عورت

مرے وعدے کی رسی

ریشۂ دل سے بنی

مضبوط رسی سے بندھی ہے

آنسوؤں سے تر نگاہوں میں

کسی کہنہ ستارے کی چمک لے کر

مرے خاکستری ملبوس کی

مخصوص خوشبو سونگھنے کو

اور بھورے نٹ کی

دکھ سے لبالب بلبلاہٹ

سننے کو تیار بیٹھی ہے!

وہی سیلن زدہ اوطاق کا گوشہ

جہاں میں ایک شب اس کو

لرزتے سنسناتے زہر والے

چوبی تیروں کی گھنی بارش میں

بے بس اور اکیلا چھوڑ آیا تھا

مجھے سب یاد ہے قصہ

برس کر ابر بالکل تھم چکا تھا

اور خلا میں چاند

یوں لگتا تھا جیسے

تخت پر نوعمر شہزادہ ہو کوئی

یوں ہوا چہرے کو مس کر کے گزرتی تھی

کہ جیسے ریشمیں کپڑا ہو کوئی

اپنے ٹھنڈے اور گیلے خول کے اندر

گلی سوئی ہوئی تھی

دم بخود سارے مکاں

ایسے نظر آتے تھے

جیسے نرم اور باریک کاغذ کے بنے ہوں

موم کے ترشے ہوئے ہوں

اک بڑی تصویر میں

جیسے ازل سے ایستادہ ہوں!

وہی سیلن زدہ اوطاق کا گوشہ

جہاں مہتاب کی براق کرنیں

اس کے لانبے اور کھلے بالوں میں اڑسے

تازہ تر انجیر کے پتے روشن کر رہی تھیں

اس کی گہری گندمیں کہنی کا بوسہ یاد ہے مجھ کو

نہیں بھولا ابھی تک

سارا قصہ یاد ہے مجھ کو

اسی شب

میں نے جب اک لمحۂ پرسوز میں

تلوار اس کے پاؤں میں رکھ دی تھی

اور پھر یہ کہا تھا:

''میرا وعدہ ہے

یہ میرا جسم اور اس جسم کی حاکم

یہ میری باطنی طاقت

قیامت اور

قیامت سے بھی آگے

سرحد امکاں سے لا امکاں تلک

تیری وفا کا ساتھ دے گی

وقت سنتا ہے

گواہی کے لیے

آکاش پر یہ چاند

قدموں میں پڑی یہ تیغ

اور بالوں میں یہ انجیر کا پتا ہی کافی ہے!''

خداوندا وہ کیسا مرحلہ تھا!

اب یہ کیسا مرحلہ ہے!

ایک سنسانی کا عالم ہے

گلی چپ ہے

کسی ذی روح کی آہٹ نہیں آتی

یہ کیسی ساعت منحوس ہے

جس میں ابھی تک

کوئی ننھا سا پرندہ یا پتنگا

یا کوئی موہوم چیونٹی ہی نہیں گزری

کسی بھی مرد و زن کی

میں نے صورت ہی نہیں دیکھی

سواری اونٹ کی ہے

اور میں شہر شکستہ کی

کسی سنساں گلی میں سر جھکائے

ہاتھ میں بد رنگ چمڑے کی مہاریں تھام کر

اس گھر کی جانب جا رہا ہوں

یا کسی محشر

خموشی کے کسی محشر کی جانب جا رہا ہوں

ہچکیوں اور سسکیوں کے بعد کا محشر

کوئی منظر

کوئی منظر کہ جس میں اک گلی ہے

ایک بھورا اونٹ ہے

اور ایک بزدل شخص کی ڈھیلی رفاقت ہے

سفر نا مختتم

جیسے ابد تک کی کوئی لمبی مسافت ہے!

سواری اونٹ کی

یا کاٹھ کے اعصاب کی ہے

آزمائش اک انوکھے خواب کی ہے

پتلیاں ساکت ہیں

سایہ اونٹ کا ہلتا نہیں

آئینۂ آثار میں

ساری شبیہیں گم ہوئی ہیں

اس کے ہونے کا نشاں ملتا نہیں

کب سے گلی میں ہوں

کہاں ہے وہ مری پیاری

مری سیلن زدہ اوطاق والی

وہ سریلی گھنٹیوں والی

زمینوں پانیوں اور انفس و آفاق والی

کس قدر آنکھوں نے کوشش کی

مگر رونا نہیں آتا

سبب کیا ہے

گلی کا آخری کونا نہیں آتا

گلی کو حکم ہو اب ختم ہو جائے

میں بھورے اور بوڑھے اونٹ پر بیٹھے ہوئے

پیری کے دن گنتا ہوں

شاید اس گلی میں رہنے والا

کوئی اس کے عہد کا زنبور ہی گزرے

میں اس کی بارگہہ میں

دست بستہ معذرت کی بھیک مانگوں

سر ندامت سے جھکاؤں

اور اس زنبور کے صدقے

کسی دن اپنے بوڑھے جسم کو

اور اونٹ کو لے کر

گلی کی آخری حد پار کر جاؤں!!

رفیق سندیلوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(745) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Sawari Oont Ki Hai by Rafiq Sandeelvi - Read Rafiq Sandeelvi's best Shayari Sawari Oont Ki Hai at UrduPoint. Here you can read the best poetry Sawari Oont Ki Hai of Rafiq Sandeelvi. Sawari Oont Ki Hai is the most famous poetry by Rafiq Sandeelvi. People love to read poetry by Rafiq Sandeelvi, and Sawari Oont Ki Hai by Rafiq Sandeelvi is best among the whole collection of poetry by Rafiq Sandeelvi.

Rafiq Sandeelvi is the most famous Urdu Poet. Therefore, people love to read Urdu Poetry of Rafiq Sandeelvi. At UrduPoint, you can find the complete collection of Urdu Poetry of Rafiq Sandeelvi. On this page, you can read Sawari Oont Ki Hai by Rafiq Sandeelvi. Sawari Oont Ki Hai is the best poetry by Rafiq Sandeelvi.

Read the Rafiq Sandeelvi's best poetry Sawari Oont Ki Hai here at UrduPoint; you will surely like it. If we make a list of Rafiq Sandeelvi's best Shayari, Sawari Oont Ki Hai of Rafiq Sandeelvi will be at the top. Many people, who love the Urdu Shayari of Rafiq Sandeelvi, regard it as the best poetry Sawari Oont Ki Hai of Rafiq Sandeelvi.

We recommend you read the most famous poetry, Sawari Oont Ki Hai of Rafiq Sandeelvi here, you will surely love it. Also, don't forget to share it with others.