Tumhari BatoN MeiN Rang, SochoN MeiN Khush Gumani Hae Ya NahiN Hae

تمہاری باتوں میں رنگ، سوچوں میں خوش گمانی ہے یا نہیں ہے

تمہاری باتوں میں رنگ، سوچوں میں خوش گمانی ہے یا نہیں ہے

مجھے بتاﺅ یہ خود فریبی، یہ رائیگانی ہے یا نہیں ہے

کسی کے شجرے میں کیا لکھا ہے مجھے غرض ہی نہیں ہے اِس سے

زباں کُھلے گی تو علم ہو گا وہ خاندانی ہے یا نہیں ہے

اگر یہ طے ہے کہ آسماں پر بنائے جاتے ہیں سارے رشتے

تو تم بتاﺅ ہماری جوڑی پھر آسمانی ہے یا نہیں ہے

میں اپنی تنہائی تَن پہ اوڑھے پلٹ رہا ہوں یہ دیکھنے کو

وہ آج بھی اپنی بے وفائی پہ پانی پانی ہے یا نہیں ہے

میں اُن سے شہباز پوچھتا ہوں، بتاﺅ مَسند نشین لوگو!

حسین لوگوں کے دِل میں رہنا بھی راجدھانی ہے یا نہیں ہے

شہباز نئر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2507) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shahbaz Nayyar, Tumhari BatoN MeiN Rang, SochoN MeiN Khush Gumani Hae Ya NahiN Hae in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Social Urdu Poetry. Also there are 8 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shahbaz Nayyar.