Dil Mein Rakhta Hai Nah Palkon Pay Bithata Hai Mujhe

دل میں رکھتا ہے نہ پلکوں پہ بٹھاتا ہے مجھے

دل میں رکھتا ہے نہ پلکوں پہ بٹھاتا ہے مجھے

پھر بھی اک شخص میں کیا کیا نظر آتا ہے مجھے

رات کا وقت ہے سورج ہے مرا راہنما

دیر سے دور سے یہ کون بلاتا ہے مجھے

میری ان آنکھوں کو خوابوں سے پشیمانی ہے

نیند کے نام سے جو ہول سا آتا ہے مجھے

تیرا منکر نہیں اے وقت مگر دیکھنا ہے

بچھڑے لوگوں سے کہاں کیسے ملاتا ہے مجھے

قصۂ درد میں یہ بات کہاں سے آئی

میں بہت ہنستا ہوں جب کوئی سناتا ہے مجھے

شہریار

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(331) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shahryar, Dil Mein Rakhta Hai Nah Palkon Pay Bithata Hai Mujhe in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 150 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shahryar.