Ju Nahi Hai Wo Ikhtiyar Main Rakh

جو نہیں ہے،وہ اختیار میں رکھ

جو نہیں ہے،وہ اختیار میں رکھ

تو مجھے دل کے خار زارمیں رکھ

بے یقینی نہ مار ڈالے کہیں

اک یقیں راہِ انتظار میں رکھ

اک مصیبت ہے ہوش میں رہنا

چشمِ ساقی، مجھے خمار میں رکھ

تجھ سے ہم ضد تو کر نہیں سکتے

جس کو چاہے ،اسے قرار میں رکھ

مرنے والوں سا حال کر ڈالا

ہم ہیں زندہ ابھی قطار میں رکھ

ایک فہرست بنا ضرورت کی

اس محبت کو بھی شمار میں رکھ

زاوئیے مت بنا خزاؤں کے

کُل جہاں خانہ ء بہار میں رکھ

شائستہ سحر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1498) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shaista Sehar, Ju Nahi Hai Wo Ikhtiyar Main Rakh in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 55 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shaista Sehar.