Umar Bhar Jane Kis Guman Main Thay

عمر بھر جانے کس گمان میں تھے

عمر بھر جانے کس گمان میں تھے

اب کُھلا، اپنے ہی گیان میں تھے

بے امانی کا خوف لاحق تھا

آسماں جب، تری امان میں تھے

جیبِ دل سے تری جو ہم نکلے

تیرے دامن کے پھر لگان میں تھے

تیرا ترکش الٹ کے دیکھ لیا

تیر کیا کیا تری کمان میں تھے

سانس تھی یا کہ آزمائش تھی

ہر گھڑی گویا امتحان میں تھے

آج حیرت سے ہم کنار ہے تو

ہم تو برسوں سے خاک دان میں تھے

اپنی مٹی سے ان کو پاٹ دیا

چھید جتنے بھی آسمان میں تھے

شائستہ سحر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1008) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shaista Sehar, Umar Bhar Jane Kis Guman Main Thay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 55 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shaista Sehar.