Nishaan E Manzil Ganwa Chuke Hain

نشانِ منزل گنوا چکے ہیں

نشانِ منزل گنوا چکے ہیں

کیا راستے سے بھٹک گئے ہیں

جو خود سری ہے بلا کی تجھ میں

تو ہم بھی ضد پر اڑے ہوئے ہیں

نہ جانے کب تم صدا دو ہم کو

اسی سبب سے رکے ہوئے ہیں

رموزِ ہستی سے آشنا ہیں.

جہاں کے سب راز کھولتے ہیں

ہمارا چہرہ وہ دیکھتا تھا

ہم اس کے چہرے کو دیکھتےہیں

اٹھا کے اپنے بدن کے ٹکڑے

ضمیرِ آدم جھنجھوڑتے ہیں

جہاں ہماری گواہی دے گا

کہ ہم محبت کے آئینے ہیں

ہمیں ودیعت ہے ضوفشانی

کہ تیرگی کو اجالتے ہیں

ہوائیں ہم سے گریز پا ہیں

کبھی جلے ہیں,کبھی بجھے ہیں

لئے ہتھیلی میں ایک جگنو

ترے ستاروں کو سوچتے ہیں

سحر زمانہ خفا ہے ہم سے

کیوں اسکی لغزش پہ بولتے ہیں

شائستہ سحر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1036) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shaista Sehar, Nishaan E Manzil Ganwa Chuke Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 55 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shaista Sehar.