بند کریں
شاعری حبیب جالبکلیات حبیب جالب

یہ اور بات تیری گلی میں نہ آئیں ہم

-

ey or bat teri gali main na aayn ham


(489) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان