Dushmano Ne Jo Dushmani Ki Hai

دشمنوں نے جو دشمنی کی ہے

دشمنوں نے جو دشمنی کی ہے

دوستوں نے بھی کیا کمی کی ہے

خامشی پر ہیں لوگ زیر عتاب

اور ہم نے تو بات بھی کی ہے

مطمئن ہے ضمیر تو اپنا

بات ساری ضمیر ہی کی ہے

اپنی تو داستاں ہے بس اتنی

غم اٹھائے ہیں شاعری کی ہے

اب نظر میں نہیں ہے ایک ہی پھول

فکر ہم کو کلی کلی کی ہے

پا سکیں گے نہ عمر بھر جس کو

جستجو آج بھی اسی کی ہے

جب مہ و مہر بجھ گئے جالبؔ

ہم نے اشکوں سے روشنی کی ہے

حبیب جالب

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(6018) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Habib Jalib, Dushmano Ne Jo Dushmani Ki Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 76 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Habib Jalib.