Meri Bachi Main Ao Na Ao

میری بچی میں آؤں نہ آؤں

میری بچی میں آؤں نہ آؤں

آنے والا زمانہ ہے تیرا

تیرے ننھے سے دل کو دکھوں نے

میں نے مانا کہ ہے آج گھیرا

آنے والا زمانہ ہے تیرا

تیری آشا کی بگیا کھلے گی

چاند کی تجھ کو گڑیا ملے گی

تیری آنکھوں میں آنسو نہ ہوں گے

ختم ہوگا ستم کا اندھیرا

آنے والا زمانہ ہے تیرا

درد کی رات ہے کوئی دم کی

ٹوٹ جائے گی زنجیر غم کی

مسکرائے گی ہر آس تیری

لے کے آئے گا خوشیاں سویرا

آنے والا زمانہ ہے تیرا

سچ کی راہوں میں جو مر گئے ہیں

فاصلے مختصر کر گئے ہیں

دکھ نہ جھیلیں گے ہم منہ چھپا کے

سکھ نہ لوٹے گا کوئی لٹیرا

آنے والا زمانہ ہے تیرا

حبیب جالب

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2924) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Habib Jalib, Meri Bachi Main Ao Na Ao in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 76 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Habib Jalib.