بند کریں
شاعری ناصر کاظمی

جب تلک دم رہا ہے آنکھوں میں

-

Jab tallak dam raha hai


(224) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان