Dard Tha Ashk Thay Barsat Thi Bass Kiya Tha Naya

درد تھا اشک تھے برسات تھی بس کیا تھا نیا

درد تھا اشک تھے برسات تھی بس کیا تھا نیا

اور راتوں کی طرح رات تھی بس کیا تھا نیا

بہرِ آدابِ مدارات تھی بس کیا تھا نیا

ایک رسمی سی ملاقات تھی بس کیا تھا نیا

ہونٹ بے رنگ ،،نمی آنکھ میں چہرہ تھا دھواں

روکشِ گردشِ حالات تھی بس کیا تھا نیا

مستحق ہے کہ نہیں سوچ کے خیرات نہ دی

روز مرّہ کی تو یہ بات تھی بس کیا تھا نیا

ڈھل گئی رات جھپکنے لگے تارے پلکیں

نیند بھی صبح کی سوغات تھی بس کیا تھا نیا

بزمِ احباب کے کیونکر میں سناوٴں قصے

عیب جوئی تھی خرافات تھی بس کیا تھا نیا

دل شکستہ جو ہوا آج سبب کیا ہے سلام

جیت انکی تھی تری مات تھی بس کیا تھا نیا

عبدالسلام بنگلوری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(628) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abdul Salam Bengaluri, Dard Tha Ashk Thay Barsat Thi Bass Kiya Tha Naya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 33 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abdul Salam Bengaluri.