Kisi Ke Hijar Main Jeena Mahaal Ho Gaya Hai

کسی کے ہجر میں جینا محال ہو گیا ہے

کسی کے ہجر میں جینا محال ہو گیا ہے

کسے بتائیں ہمارا جو حال ہو گیا ہے

کہیں گرا ہے نہ روندا گیا ہے دل پھر بھی

شکستہ ہو گیا ہے پائمال ہو گیا ہے

سحر جو آئی ہے شب کے تمام ہونے پر

تو اس میں کون سا ایسا کمال ہو گیا ہے

کوئی بھی چیز سلامت نہیں مگر یہ دل

شکستگی میں جو اپنی مثال ہو گیا ہے

ادھر چراغ جلے ہیں کسی دریچے میں

ادھر وظیفۂ دل بحال ہو گیا ہے

حیا کا رنگ جو آیا ہے اس کے چہرے پر

یہ رنگ حاصل شام وصال ہو گیا ہے

مسافت شب ہجراں میں چاند بھی اجملؔ

تھکن سے چور غموں سے نڈھال ہو گیا ہے

اجمل سراج

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(867) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ajmal Siraj, Kisi Ke Hijar Main Jeena Mahaal Ho Gaya Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 19 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ajmal Siraj.