Main Nay Aey Dil Tujhe Seenay Se Lagaya Howa Hai

میں نے اے دل تجھے سینے سے لگایا ہوا ہے

میں نے اے دل تجھے سینے سے لگایا ہوا ہے

اور تو ہے کہ مری جان کو آیا ہوا ہے

بس اسی بوجھ سے دوہری ہوئی جاتی ہے کمر

زندگی کا جو یہ احسان اٹھایا ہوا ہے

کیا ہوا گر نہیں بادل یہ برسنے والا

یہ بھی کچھ کم تو نہیں ہے جو یہ آیا ہوا ہے

راہ چلتی ہوئی اس راہ گزر پر اجملؔ

ہم سمجھتے ہیں قدم ہم نے جمایا ہوا ہے

ہم یہ سمجھے تھے کہ ہم بھول گئے ہیں اس کو

آج بے طرح ہمیں یاد جو آیا ہوا ہے

وہ کسی روز ہواؤں کی طرح آئے گا

راہ میں جس کی دیا ہم نے جلایا ہوا ہے

کون بتلائے اسے اپنا یقیں ہے کہ نہیں

وہ جسے ہم نے خدا اپنا بنایا ہوا ہے

یوں ہی دیوانہ بنا پھرتا ہے ورنہ اجملؔ

دل میں بیٹھا ہوا ہے ذہن پہ چھایا ہوا ہے

اجمل سراج

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1011) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ajmal Siraj, Main Nay Aey Dil Tujhe Seenay Se Lagaya Howa Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 19 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ajmal Siraj.