Main Nay Mana Aik Nah Ik Din Lout Ke To A Jaye Ga

میں نے مانا ایک نہ اک دن لوٹ کے تو آ جائے گا

میں نے مانا ایک نہ اک دن لوٹ کے تو آ جائے گا

لیکن تجھ بن عمر جو گزری کون اسے لوٹائے گا

ہجر کے صدمے اس کا تغافل باتیں ہیں سب کہنے کی

کچھ بھی نہ مجھ کو یاد رہے گا جب وہ گلے لگ جائے گا

خواب وفا آنکھوں میں بسائے پھرتا ہے کیا دیوانے

تعبیریں پتھراؤ کریں گی جب تو خواب سنائے گا

کتنی یادیں کتنے قصے نقش ہیں ان دیواروں پر

چلتے چلتے دیکھ لیں مڑ کر کون یہاں پھر آئے گا

باد بہاری اتنا بتا دے سادہ دلان موسم کو

صرف چمن جو خون ہوا ہے رنگ وہ کب تک لائے گا

اختر سعید خان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(826) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Akhtar Saeed Khan, Main Nay Mana Aik Nah Ik Din Lout Ke To A Jaye Ga in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 51 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Akhtar Saeed Khan.