Jaan Di Kis Ke Liye Hum Yeh Bitayen Kis Ko

جان دی کس کے لئے ہم یہ بتائیں کس کو

جان دی کس کے لئے ہم یہ بتائیں کس کو

کون کیا بھول گیا یاد دلائیں کس کو

جرم کی طرح محبت کو چھپا رکھا ہے

ہم گنہ گار نہیں ہیں یہ بتائیں کس کو

روٹھ جاتے تو منانا کوئی دشوار نہ تھا

وہ تعلق ہی نہ رکھیں تو منائیں کس کو

کون دیتا ہے یہاں خواب جنوں کی تعبیر

خواب ہم اپنے سنائیں تو سنائیں کس کو

کوئی پرسان وفا ہے نہ پشیمان جفا

زخم ہم اپنے دکھائیں تو دکھائیں کس کو

چاک دل چاک گریباں تو نہیں ہم نفسو

ہم یہ تصویر سر بزم دکھائیں کس کو

کون اس شہر میں سنتا ہے فغان درویش

اپنی آشفتہ بیانی سے رلائیں کس کو

ہو گیا خاک رہ کوئے ملامت اخترؔ

راہ پر لائیں جو احباب تو لائیں کس کو

اختر سعید خان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(479) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Akhtar Saeed Khan, Jaan Di Kis Ke Liye Hum Yeh Bitayen Kis Ko in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 51 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Akhtar Saeed Khan.