Na Tu Hum Beher Se Waqif Na Sukhaan Jante Hain

نہ تو ہم بحر سے واقف نہ سخن جانتے ہیں

نہ تو ہم بحر سے واقف نہ سخن جانتے ہیں

کیسے دیں لفظوں کو ترتیب یہ فن جانتے ہیں

وہ کسی طور بھی تجھ کو نہ لگائیں گے گلے

اے خوشی جو بھی ترا چال چلن جانتے ہیں

دل کے مندر میں ہیں دو ایک پجاری ایسے

جو نہ پوجا نہ عبادت نہ بھجن جانتے ہیں

اس لئے تھام کے رکھا ہے جنوں کا دامن

اے خرد ہم ترا دیوالیہ پن جانتے ہیں

جو محبت کے ہیں الفاظ مرے ہونٹوں پر

وہ تعصب کا ترے چیر ہرن جانتے ہیں

پاؤں پھیلاتے ہیں اتنا کہ ہے جتنی چادر

اپنی اوقات ہے کیا خوب اپن جانتے ہیں

فیض خلیل آبادی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(843) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Faiz KhalilAbadi, Na Tu Hum Beher Se Waqif Na Sukhaan Jante Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 15 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Faiz KhalilAbadi.