Raat Banjar Hui

رات بنجر ہوئی

کوئی اکھوا نہیں پھوٹتا

رات کی زرد ٹہنی کی کمزور بانہیں کسی پھول کی آرزو سے تہی

رات بنجر ہوئی کوکھ جیسی ہوئی ،یعنی بے آرزو

کوئی شوقِ فروں تر نہ جذبِ دروں

کوئی ہنگامہ خیزی نہ سیلِ بلا خیز کا سامنا

ایک تیرہ شبی جس میں ذوقِ نمو کا گزر تک نہیں

جن زمینوں کی یومِ ازل سے نہیں بیج سے آشنائی وہ کیسے کہیں

جن دماغوں پہ احساس کا تازیانہ نہیں

شوق کیسے جنیں ،نظم کیسے بنیں

کوکھ میں رکھ کے پالے ہوئے خواب کو

جب تلک آنکھ ماں بن کے روتی نہیں

نظم ہوتی نہیں

نظم ہوتی نہیں اور تیرہ شبی،

بارور کرنے والی حسیں تیرگی کوکھ میں رکھ کے پالے کسے

دن کے زرخیز لمحے میں گر روشنی بیج بوتی نہیں

نظم ہوتی نہیں

فاخرہ نورین

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(538) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fakhra Noreen, Raat Banjar Hui in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 23 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fakhra Noreen.