Diya Jala Kay Koi Chand Pe Rakha Hoga

دیا جلا کے کوئی چاند پہ رکھا ہوگا

دیا جلا کے کوئی چاند پر رکھا ہوگا

اسی کے سائے میں وہ ہم کو ڈھونڈھتا ہوگا

کوئی تو ضد میں یہ آ کر کبھی کہے ہم سے

یہ بات یوں نہیں ایسے تھی یوں ہوا ہوگا

تمہارا گھر سر مہتاب جو بنا ڈالے

تمہارا بیٹا نہیں وہ خدا رہا ہوگا

وہ آنکھیں ابر کی مانند رو رہی ہوں گی

وہ زینہ خواب میں مہتاب پر ٹکا ہوگا

یہ کیا ضروری ہے آنکھوں میں دیر تک رہنا

خیال آپ ہی تصویر بن گیا ہوگا

سنہرے پنجرے کی اپنی ہی حیثیت ہوگی

پرندہ خوش ہے مگر خوب چیختا ہوگا

کہا ہے ایک نجومی نے تم ملوگے ہمیں

زمیں سے چاند تلک ایک راستہ ہوگا

خدا کرے کہ بہت جلد تم کو دیکھ آئیں

تمہارے گھر میں اب اک پھول کھل اٹھا ہوگا

ف س اعجاز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1348) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fay Seen Ejaz, Diya Jala Kay Koi Chand Pe Rakha Hoga in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 24 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fay Seen Ejaz.