Copy Right

کاپی رائٹ

کیا رومانی لمحہ تھا

شعرا پر یہ شرط لگی تھی

چھت پر پورا چاند دیکھ کر

سب کو نظم سنانی ہوگی

پورے چاند کو تکتے تکتے

میں نے بھی اک نظم سنائی

میرے لئے وہ نظم نہیں تھی

بیل کوئی انگور کی تھی

جس نے میرا خون پیا تھا

چاند نے لیکن شعر سنے تو

وہ بے حد مسحور ہوا تھا

ایسا لگا کہ اس کے تن سے

چھلبل اڑتی

دھول سنہری

سننے والوں کی پلکوں پر آ بیٹھی ہو

لوگوں نے یوں داد مجھے دی

گویا چاند کے کاپی رائٹ میرے ہوں

میں نے اپنی نظم سنائی اردو میں

کیا رومانی لمحہ تھا

ف س اعجاز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(423) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fay Seen Ejaz, Copy Right in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 24 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fay Seen Ejaz.