Jo Dil Bar Ki Mohabbat Dil Se Badlay

جو دل بر کی محبت دل سے بدلے

جو دل بر کی محبت دل سے بدلے

تو لوں امید لا حاصل سے بدلے

محال عقل کوئی شے نہیں ہے

جو آسانی مری مشکل سے بدلے

جہاں ہے کور اور خورشید محجوب

کہاں تک شمع ہر محفل سے بدلے

تہی دست محبت تو بھی سمجھو

جو جم ساغر کو جام گل سے بدلے

ہر اک کو جان دینے کی خوشی ہو

اجل گر ناوک قاتل سے بدلے

اگر ہو چیں جبیں قاتل دم قتل

قیامت قامت قاتل سے بدلے

ابھی ہم تو عدو سے بھی بدل لیں

جو غم کو غم سے دل کو دل سے بدلے

کھلے احوال دل جب ناصحوں پر

تہہ دریا اگر ساحل سے بدلے

شبستاں چھوڑ کر لیلیٰ ہو مجنوں

مری آغوش گر محمل سے بدلے

نہ جنبش اک قدم ہو آسماں سے

مری منزل اگر منزل سے بدلے

بتوں کا جلوہ کعبے میں دکھا دیں

ذرا تقویٰ دل مائل سے بدلے

قلقؔ اس ظلم کا پھر کیا ٹھکانا

اگر مقتول لے قاتل سے بدلے

غلام مولیٰ قلق

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(288) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of GHULAM MAULA QALAQ, Jo Dil Bar Ki Mohabbat Dil Se Badlay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 44 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of GHULAM MAULA QALAQ.