Nah Jane Kitni Rivaytain Munhadim Hoien Hain

نہ جانے کتنی روایتیں منہدم ہوئیں ہیں

نہ جانے کتنی روایتیں منہدم ہوئیں ہیں

بپا جہاں بھی ہے شور محشر کھڑا ہوا ہوں

یہ کیسا منظر ہے اس کو کس زاویے سے دیکھوں

کہ خود بھی اس دائرے کے اندر کھڑا ہوا ہوں

اب اس نظارے کی تاب لاؤں تو کیسے لاؤں

وہی ہے میدان وہی ہے لشکر کھڑا ہوا ہوں

ہزار طوفان برق و باراں ہیں ساحلوں پر

لیے ہوئے اک شکستہ لنگر کھڑا ہوا ہوں

اسرار زیدی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(644) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Israr Zaidi, Nah Jane Kitni Rivaytain Munhadim Hoien Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 36 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Israr Zaidi.