Nahi Aaisa Tu Nahi Piyar Nahi Chahta Main

نہیں ایسا تو نہیں پیار نہیں چاہتا میں

نہیں ایسا تو نہیں پیار نہیں چاہتا میں

اس کا دنیا پہ ہو اظہار، نہیں چاہتا میں

میرے حِصّے کی وراثت بھی تُو رکھ لے بھِائی

صحن کے بیچ میں دیوار نہیں چاہتا میں

اِس میں راحت سے زیادہ ہے اذیّت اے دِل

میرے بچے ہوں قلمکار نہیں چاہتا میں

جس کے پڑھنے کو سمجھنے کو لُغت چاہئے ہو

شعر کہنے کا وہ معیار نہیں چاہتا میں

میں دلیلوں کا نہیں پیار کا حامی ہوں قمر

بحث کرتا نہیں، تکرار نہیں چاہتا میں

جمیل قمر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(306) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Jamil Qamar, Nahi Aaisa Tu Nahi Piyar Nahi Chahta Main in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 68 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Jamil Qamar.