Kissi Bhi Rah Pey Rukna Na Faisla Kar K

کسی بھی راہ پہ رکنا نہ فیصلہ کر کے

کسی بھی راہ پہ رکنا نہ فیصلہ کر کے

بچھڑ رہے ہو مری جان حوصلہ کر کے

میں انتظار کی حالت میں رہ نہیں سکتا

وہ انتہا بھی کرے آج ابتدا کر کے

تری جدائی کا منظر بیاں نہیں ہوگا

میں اپنا سایہ بھی رکھوں اگر جدا کر کے

مجھے تو بحر بلا خیز کی ضرورت تھی

سمٹ گیا ہوں میں دنیا کو راستہ کر کے

کسی خیال کا کوئی وجود ہو شاید

بدل رہا ہوں میں خوابوں کو تجربہ کر کے

کبھی نہ فیصلہ جلدی میں کیجیے ساحلؔ

بدل بھی سکتا ہے کافر وہ بد دعا کر کے

خالد ملک ساحل

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(590) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Khalid Malik Sahil, Kissi Bhi Rah Pey Rukna Na Faisla Kar K in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 25 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Khalid Malik Sahil.