Thora Hai Jis Qader Mein Parhon Khat Habib Ka

تھوڑا ہے جس قدر میں پڑھوں خط حبیب کا

تھوڑا ہے جس قدر میں پڑھوں خط حبیب کا

دیکھا ہے آج آنکھوں سے لکھا نصیب کا

ہم مے کشوں نے نشہ میں ایسے کیے سوال

دم بند کر دیا سر منبر خطیب کا

صیاد گھات میں ہے کہیں باغباں کہیں

سارا چمن ہے دشمن جاں عندلیب کا

اپنی زبان سے مجھے جو چاہے کہہ لیں آپ

بڑھ بڑھ کے بولنا نہیں اچھا رقیب کا

آنکھیں سفید ہو گئیں جب انتظار میں

اس وقت نامہ بر نے دیا خط حبیب کا

قسمت ڈبونے لائی ہے دریائے عشق میں

اے خضر پار کیجئے بیڑا غریب کا

وہ بے خطا ہیں ان سے شکایت ہی کس لیے

جوہرؔ یہ سب قصور ہے اپنے نصیب کا

لالہ مادھو رام جوہر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(250) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of LALA MADHAV RAM JAUHAR, Thora Hai Jis Qader Mein Parhon Khat Habib Ka in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 84 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of LALA MADHAV RAM JAUHAR.