Karam K Baab Main Apnoon Se Ibteda Kiya Kar

کرم کے باب میں اپنوں سے ابتدا کیا کر

کرم کے باب میں اپنوں سے ابتدا کیا کر

ذرا سی بات پہ دل کو نہ یوں برا کیا کر

نماز عشق ہے ٹوٹے دلوں کی دل داری

مرے عزیز نہ اس کو کبھی قضا کیا کر

اجالے کے لئے ہے چشم و دل کا آئینہ

بپا کبھی کسی مظلوم کی عزا کیا کر

بنام مذہب و ملت یہ خوں بہانا کیا

ہری ہری وہ کریں تو خدا خدا کیا کر

بجا سہی یہ حیا اور یہ احتیاط مگر

کبھی کبھی تو محبت میں حوصلہ کیا کر

نظر میں رکھ مرے اظہار کی ضرورت کو

کبھی تو نون کا اعلان بھی روا کیا کر

وہ عیب ڈھکتا ہے تیرے سبھی مجید اخترؔ

سو تو بھی درگزر احباب کی خطا کیا کر

مجید اختر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(665) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majeed Akhtar, Karam K Baab Main Apnoon Se Ibteda Kiya Kar in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majeed Akhtar.