Ziker Sabt E Syed Khair Ul Wara Karta Tha Raat

ذکرِ سبطِ سیدِ خیرالوریٰ کرتا تھا رات

ذکرِ سبطِ سیدِ خیرالوریٰ کرتا تھا رات

شعر کہتا تھا کہ گویا معجزہ کرتا تھا رات

مدحتِ آلِ نبی میں بیت جائے زندگی

بارگاہِ کبریا میں یہ دعا کرتا تھا رات

ہو سخن ارزاں، اضافہ ہو مری توفیق میں

شہرِعلم و آگہی سے التجا کرتا تھا رات

جانے کب فکر و نظر کی منزلیں طے ہوگئیں

میں تو وردِ یا علی مشکل کشا کرتا تھا رات

میرے پھیلائے ہوئے دامن کی وسعت تنگ تھی

مجھ پہ اتنی بخششیں دستِ سخا کرتا تھا رات

گھر مرا فردوس میں تعمیر کرتے تھے مَلَک

میں ثنائے دلبرِ خیرالنساء کرتا تھا رات

یوں لگا کمرے سے آتی ہے صدائے یا حسین

یوں لگا جیسے کوئی دل میں عزا کرتا تھا رات

بے یقینی کی ہر اک زنجیر کٹ کے گر گئی

میں کہیں ذکرِ اسیرِ کربلا کرتا تھا رات

اپنی پیشانی پہ ضربیں مار کر تلوار سے

اک ملنگی ذکرِ شاہِ کربلا کرتا تھا رات

واہموں اور وسوسوں کے پھونک کر سارے چراغ

اک چراغِ معتبر کیسی ضیا کرتا تھا رات

یاد آئے اے سکینہ، کل ترے عمٌو بہت

اک مقرر اک جگہ ذکر۔ وفا کرتا تھا رات

دست۔ غازی میں فرشتہ تیغ۔ حیدر دیکھ کر

بادلوں میں اک صدائے لافتیٰ کرتا تھا رات

کون جانے کیسی باتیں پیار سے یوں صبح تک

ماں سے اپنی اکبر۔ شیریں ادا کرتا تھا رات

یا حسینا، یا حسینا، یا حسینا، یا حسین

بال کھولے کون مقتل میں صدا کرتا تھا رات

مجید اختر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(904) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majeed Akhtar, Ziker Sabt E Syed Khair Ul Wara Karta Tha Raat in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Marsiya, and the type of this Nazam is Islamic Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Islamic poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majeed Akhtar.