Marey Liye Tri Nazron Ki Roshni Hai Bohat

مرے لیے تری نظروں کی روشنی ہے بہت

مرے لیے تری نظروں کی روشنی ہے بہت

کہ دیکھ لوں تجھے پل بھر مجھے یہی ہے بہت

یہ اور بات کہ چاہت کے زخم گہرے ہیں

تجھے بھلانے کی کوشش تو ورنہ کی ہے بہت

کچھ اس خطا کی سزا بھی تو کم نہیں ملتی

غریب شہر کو اک جرم آگہی ہے بہت

کہاں سے لاؤں وہ چہرہ وہ گفتگو وہ ادا

ہزار حسن ہے گلیوں میں آدمی ہے بہت

کبھی تو مہلت نظارہ نکہت گزراں

لبوں پہ آگ سلگتی ہے تشنگی ہے بہت

کسی نے ہنس کے جو دیکھا تو ہو گئے اس کے

کہ اس زمانے میں اتنی سی بات بھی ہے بہت

محمود شام

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(838) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mehmood Sham, Marey Liye Tri Nazron Ki Roshni Hai Bohat in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love Urdu Poetry. Also there are 53 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mehmood Sham.