Bitayen Kya Ke Aaye Hain Kahan Se Hum Kahan Ho Kar

بتائیں کیا کہ آئے ہیں کہاں سے ہم کہاں ہو کر

بتائیں کیا کہ آئے ہیں کہاں سے ہم کہاں ہو کر

نشاں اب ڈھونڈتے پھرتے ہیں گھر کا بے نشاں ہو کر

لبھانے کو دل شیدا کے ساری پردہ داری تھی

عیاں ہو تم نہاں ہو کر نہاں ہو تم عیاں ہو کر

ہماری خاک کے ذرے فنا ہو کر بھی چمکیں گے

عروج اپنا دکھائیں گے یہ نجم آسماں ہو کر

دل آوارہ کیوں تجھ کو خیال کوئے جاناں ہے

ارے ناداں کہاں جا کر رہے گا بے نشاں ہو کر

یہ دور مے کشی ہر وقت محو دید رکھتا ہے

کہاں آنکھوں میں یہ غفلت رہے خواب گراں ہو کر

مسلماں ہو کے ترک بت پرستی اے معاذ اللہ

خدا کو ہم نے پہچانا ہے شیدائے بتاں ہو کر

یہ بار‌ معصیت منزل کڑی اور شام تنہائی

چلے ہیں کیا سمجھ کر ہم بھی رسوائے جہاں ہو کر

ابھی کیا جانے کیا کیا رنگ وہ اے شوقؔ بدلے گا

زمیں پر اک کرے گا حشر برپا آسماں ہو کر

پنڈت جگموہن ناتھ رینا شوق

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(382) ووٹ وصول ہوئے

پنڈت جگموہن ناتھ رینا شوق کی مزید شاعری

کچھ تو ہو درد کی لذت ہی سہی

Kuch To Ho Dard Ki Lazzat Hi Sahi

پنڈت جگموہن ناتھ رینا شوق (PANDIT JAGMOHAN NATH RAINA SHAUQ)

دل سے پوچھو کیا ہوا تھا اور کیوں خاموش تھا

Dil Se Pucho Kya Howa Tha Aur Kyun Khamosh Tha

پنڈت جگموہن ناتھ رینا شوق (PANDIT JAGMOHAN NATH RAINA SHAUQ)

مرنا مریض عشق کے حق میں شفا ہوا

Marna Mareez Ishq Ke Haq Mein Shifa Howa

پنڈت جگموہن ناتھ رینا شوق (PANDIT JAGMOHAN NATH RAINA SHAUQ)

چرا نہ آنکھ کو ساقی کہ بادہ نوش ہوں میں (ردیف .. ر)

Chura Nah Aankh Ko Saqi Ke Baadah Nosh Hon Mein ( Radeef. . Ray )

پنڈت جگموہن ناتھ رینا شوق (PANDIT JAGMOHAN NATH RAINA SHAUQ)

وحشت دل نے کہیں کا بھی نہ رکھا مجھ کو

Wehshat Dil Ne Kahin Ka Bhi Nah Rakha Mujh Ko

پنڈت جگموہن ناتھ رینا شوق (PANDIT JAGMOHAN NATH RAINA SHAUQ)

وفا شعار کو تو نے ذلیل و خوار کیا

Wafa Shoaar Ko To Ne Zaleel O Khawar Kya

پنڈت جگموہن ناتھ رینا شوق (PANDIT JAGMOHAN NATH RAINA SHAUQ)

حریم ناز کہاں اور سر نیاز کہاں

Hareem Naz Kahan Aur Sir Niaz Kahan

پنڈت جگموہن ناتھ رینا شوق (PANDIT JAGMOHAN NATH RAINA SHAUQ)

لا مکاں نام ہے اجڑے ہوئے ویرانے کا

Laa Makan Naam Hai Ujre Hue Veraney Ka

پنڈت جگموہن ناتھ رینا شوق (PANDIT JAGMOHAN NATH RAINA SHAUQ)

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of PANDIT JAGMOHAN NATH RAINA SHAUQ, Bitayen Kya Ke Aaye Hain Kahan Se Hum Kahan Ho Kar in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 24 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of PANDIT JAGMOHAN NATH RAINA SHAUQ.