Jab Tri Chaah Mein Daman Junoo Chaak Howa

جب تری چاہ میں دامان جنوں چاک ہوا

جب تری چاہ میں دامان جنوں چاک ہوا

پھر کہیں جا کے مجھے عشق کا ادراک ہوا

یوں تو اک جیسے نظر آتے ہیں چہرے لیکن

کوئی خوش خواب ہوا اور کوئی غم ناک ہوا

ورق جاں پہ لکھے میں نے صحیفے دل کے

اس حوالے سے بھی میں شعلۂ بے باک ہوا

کوئی مر کے بھی زمانے میں امر ہوتا ہے

اور کوئی جیتے ہوئے بھی جسد خاک ہوا

جس کی لہروں سے جنم لیتے ہیں صندل سے بدن

اس سمندر کا بصد شوق میں پیراک ہوا

اے خیالؔ آئینۂ حسن مجسم کی قسم

خاک پر بیٹھ کے میں صاحب افلاک ہوا

رفیق خیال

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(317) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Rafique Khayal, Jab Tri Chaah Mein Daman Junoo Chaak Howa in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 41 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Rafique Khayal.