Jaan Muqadar Main Thi Jaan Se Pyara Nah Tha

جان مقدر میں تھی جان سے پیارا نہ تھا

جان مقدر میں تھی جان سے پیارا نہ تھا

میرے لیے صبح تھی صبح کا تارا نہ تھا

بحر شب و روز میں بہہ گئے تنکے سے ہم

موج بلا خیز تھی اور کنارا نہ تھا

جان کے دشمن تھے سب لوگ ترے شہر کے

عمر کٹی جس جگہ پل بھی گزارا نہ تھا

سرد رہی عمر بھر انجمن آرزو

خار و خس شوق میں کوئی شرارہ نہ تھا

کس کے لیے جاگتے کس کی طرف بھاگتے

اتنے بڑے شہر میں کوئی ہمارا نہ تھا

شوق سفر بے سبب اور سفر بے طلب

اس کی طرف چل دیے جس نے پکارا نہ تھا

دور سہی منزلیں اب نہ رہیں ہمتیں

ٹوٹ گئے پائے شوق دل ابھی ہارا نہ تھا

شہزاد احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(717) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shahzad Ahmed, Jaan Muqadar Main Thi Jaan Se Pyara Nah Tha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shahzad Ahmed.