Aah Ka Jaam Gham E Sabu Kab Tak

آہ کا جام، غم سبو کب تک

آہ کا جام، غم سبو کب تک

ماتمِ مرگِ آرزو کب تک

وہ جو موجود ہے نہیں موجود

جو نہیں ہے، وہ روبرو کب تک

تیرگی بھی ہے زلف کا افسوں

زلف سے شامِ مشکبو، کب تک

ایک دن میں بھی سوکھ جاؤنگی

مجھ سے پائے گا تو، نمو کب تک

میرے اندر بہت گھٹن ہے دوست

مجھ میں پھیلے گا، چار سو کب تک

خود میں آؤنگی میں نجانے کب

مجھ سے جائے گا جانے تو کب تک

کوئی تو بسنے والا ہو اس میں

آنکھ آخر رہے لہو کب تک

ہم کو خود سے بھی بات کرنی ہے

آئینے تجھ سے گفتگو کب تک

میرے اندر کی روشنی بھی دیکھ

چاندنی تجھ سے ماہ رو کب تک

شائستہ سحر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(901) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shaista Sehar, Aah Ka Jaam Gham E Sabu Kab Tak in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 55 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shaista Sehar.