Jab Bhi Gulshan Main Rang O Bu Thehre

جب بھی گلشن میں رنگ و بُو ٹھہرے

جب بھی گلشن میں رنگ و بُو ٹھہرے

آشیانے کی آرزو ٹھہرے

کس نے تجھ کو خدا سے مانگ لیا

ہم جو کرنے ذرا وضو ٹھہرے

ذکر محفل میں چل پڑے کوئی

ہم پہ ہی آ کے گفتگو ٹھہرے

دل کے بچنے کی ایک صورت ہے

آئے، اور آ کے اس میں تُو ٹھہرے

مندمل زخم دل کے ہو جایئں

لمحہ بھر جو ذرا لہو ٹھہرے

عمر ساری پلائی آنکھوں نے

معتبر جام اور سبو ٹھہرے

ہو تبسم کہ حضرتِ غالب

شعر کی دونوں آبرو ٹھہرے

تبسم انوار

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(579) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Tabassum Anwaar, Jab Bhi Gulshan Main Rang O Bu Thehre in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 33 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Tabassum Anwaar.