Abhi Mere Sans Chal Rahi Hai Mujhe Bacha Lo

ابھی مِری سانس چل رہی ہے ' مجھے بچا لو

ابھی مِری سانس چل رہی ہے ' مجھے بچا لو

کہ مجھ میں تھوڑی سی زندگی ہے ' مجھے بچا لو

بنا کے بم آدمی پکارا : مَیں اب ہوں محفوظ

اُور آدمیّت پکارتی ہے ' مجھے بچا لو

شجر کو جب کاٹنے لگے تو صدا یہ آئی :

کہ مجھ میں اک شاخ ابھی ہَری ہے ' مجھے بچا لو

مَیں بچ گیا تو تمہیں بتاؤں گا رازِ ہستی

سمجھ لو وہ راز قیمتی ہے ' مجھے بچا لو

بڑی محبّت سے جس کو تم نے کِیا تھا تخلیق

تمہیں وہ تخلیق کہہ رہی ہے ' مجھے بچا لو

" ہمیں بچا لو " بچانے والوں سے کب کہا ہے ؟

سبھی کے ہونٹوں پہ بس یہی ہے ' مجھے بچا لو

اِسی لئے تو اندھیرے مجھ کو مٹانا چاہیں

کہ مجھ میں کچھ روشنی بچی ہے ' مجھے بچا لو

مَیں اک عمارت کی چھت کو تھامے لٹک رہا ہوں

گرِفت ڈھیلی سی پڑ رہی ہے ' مجھے بچا لو

مجھے بچا کر تمہاری طاقت بڑھے گی ' تیــمُــورؔ !

مجھے بچانے میں بہتری ہے ' مجھے بچا لو

تیمور حسن تیمور

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(668) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Taimur Hasan Taimur, Abhi Mere Sans Chal Rahi Hai Mujhe Bacha Lo in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 42 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Taimur Hasan Taimur.