Our Kya Mare Liye Arsa Mahshar Hoga

اور کیا میرے لیے عرصۂ محشر ہوگا

اور کیا میرے لیے عرصۂ محشر ہوگا

میں شجر ہوں گا ترے ہاتھ میں پتھر ہوگا

یوں بھی گزریں گی ترے ہجر میں راتیں میری

چاند بھی جیسے مرے سینے میں خنجر ہوگا

زندگی کیا ہے کئی بار یہ سوچا میں نے

خواب سے پہلے کسی خواب کا منظر ہوگا

ہاتھ پھیلائے ہوئے شام جہاں آئے گی

بند ہوتا ہوا دروازۂ خاور ہوگا

میں کسی پاس کے صحرا میں بکھر جاؤں گا

تو کسی دور کے ساحل کا سمندر ہوگا

وہ مرا شہر نہیں شہر خموشاں کی طرح

جس میں ہر شخص کا مرنا ہی مقدر ہوگا

کون ڈوبے گا کسے پار اترنا ہے ظفرؔ

فیصلہ وقت کے دریا میں اتر کر ہوگا

احمد ظفر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(849) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ahmed Zafar, Our Kya Mare Liye Arsa Mahshar Hoga in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 36 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ahmed Zafar.