Mehv Zari Tu Rakha Dil Ki Lagi Ne Shab Bhar

محو زاری تو رکھا دل کی لگی نے شب بھر

محو زاری تو رکھا دل کی لگی نے شب بھر

لیکن آنسو بھی جو پونچھے تو اسی نے شب بھر

یہ مرے دل کی چمک ہے کہ تری آنکھ کا نور

ذہن میں ناچتے رہتے ہیں نگینے شب بھر

روحیں دم ساز ہیں تو جسم بھی ہم راز بنیں

یوں تو تڑپیں گے یہ جلتے ہوئے سینے شب بھر

اجنبی جان کے ڈرتے رہے سب دروازے

میری آواز نہ پہچانی کسی نے شب بھر

دل کے بیتاب سمندر میں تمنا بن کر

ڈوبتے تیرتے رہتے ہیں سفینے شب بھر

اس کے بام فلک آثار کی تصویر میں گم

میری تخئیل بناتی رہی زینے شب بھر

جہاں بیداریاں بیٹھی ہیں محافظ بن کر

ہم نے خوابوں میں نکالے وہ دفینے شب بھر

آنکھ اٹھا کر بھی نہیں دیکھتا اب دن میں جسے

کتنا بے چین رکھا مجھ کو اسی نے شب بھر

شعر ہی کہئے کہ شاید ملے تسکین انجمؔ

یوں تو یہ چاندنی دے گی نہیں جینے شب بھر

انوار انجم

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(341) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Anwar Anjum, Mehv Zari Tu Rakha Dil Ki Lagi Ne Shab Bhar in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 26 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Anwar Anjum.