Arzu Thi Yeh Bakharain Apni Kirnain Subha Tak

آرزو تھی یہ بکھیریں اپنی کرنیں صبح تک

آرزو تھی یہ بکھیریں اپنی کرنیں صبح تک

روتے روتے بجھ گئی ہیں ساری شمعیں صبح تک

شب کی مٹھی میں پرندوں کی طرح وہ سو گئیں

ہو گئیں زندہ ہتھیلی پر لکیریں صبح تک

وقت کی گزری عبارت کی تلاوت کے لیے

رات کی تنہائیوں میں آؤ گھومیں صبح تک

دن کا سورج ان پہ لکھے گا انوکھے تبصرے

ہم نے جو تالیف کیں دل پر کتابیں صبح تک

زندگی کے راستوں میں جو کہیں گم ہو گئے

ڈھونڈتی اب ان کو ہیں خوابوں میں آنکھیں صبح تک

آشیانوں میں نہ جب لوٹے پرندے تو سدیدؔ

دور تک تکتی رہیں شاخوں میں آنکھیں صبح تک

انور سدید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(404) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Anwar Sadeed, Arzu Thi Yeh Bakharain Apni Kirnain Subha Tak in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 22 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Anwar Sadeed.