Har Simt Samundar Hai Har Simt Pani

ہر سمت سمندر ہے ہر سمت رواں پانی

ہر سمت سمندر ہے ہر سمت رواں پانی

چھاگل ہے مری خالی سوچو ہے کہاں پانی

بارش نہ اگر کرتی دریا میں رواں پانی

بازار میں بکنے کو آ جاتا گراں پانی

خود رو ہے اگر چشمہ آئے گا مری جانب

میں بھی وہیں بیٹھا ہوں مرتا ہے جہاں پانی

کل شام پرندوں کو اڑتے ہوئے یوں دیکھا

بے آب سمندر میں جیسے ہو رواں پانی

جس کھیت سے دہقاں کو مل جاتی تھی کچھ روزی

اس کھیت پہ دیکھا ہے حاکم ہے رواں پانی

چشمے کی طرح پھوٹا اور آپ ہی بہہ نکلا

رکھتا بھلا میں کب تک آنکھوں میں نہاں پانی

بہہ جاتی ہے ساتھ اس کے شہروں کی غلاظت بھی

جاروب کش عالم لگتا ہے رواں پانی

بس ایک ہی ریلے میں ڈوبے تھے مکاں سارے

انورؔ کا وہیں گھر تھا بہتا تھا جہاں پانی

انور سدید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(486) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Anwar Sadeed, Har Simt Samundar Hai Har Simt Pani in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 22 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Anwar Sadeed.