Dil Shikasta Tha Tu Ansu Bhi Bahaya Mein Ne

دل شکستہ تھا تو آنسو بھی بہایا مَیں نے

دل شکستہ تھا تو آنسو بھی بہایا مَیں نے

ہاں مگر اس کا تماشا نہ بنایا مَیں نے

وہ مرے دل کی زمیں پر نہیں اترا تو اسے

اپنے شعروں کی زمینوں میں بسایا مَیں نے

اس کا غم میرے لیے باعثِ آزار نہ تھا

دل کا ٹکڑا تھا، کلیجے سے لگایا مَیں نے

اپنے ہر غم میں اسے خود سے جدا ہی رکھا

ایک دن ٹوٹ گیا وہ تو اُٹھایا مَیں نے

اس غمِ ظاہر و موجود کے تہ خانے میں

اک خزانہ غمِ ہستی کا چھپایا مَیں نے

نفس کو باگ بھی ڈالی کہ وہ قابو میں رہے

دلِ وحشی کو دھڑکنا بھی سکھایا مَیں نے

ایک دن اُس نے مجھے چھوڑ دیا تھا تنہا

آج موقع تھا مگر یہ نہ جتایا مَیں نے

ایک مایوسی میں دل ڈوب رہا تھا اس روز

اک سفینہ تھا جسے پار لگایا مَیں نے

عماد احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(532) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Emad Ahmad, Dil Shikasta Tha Tu Ansu Bhi Bahaya Mein Ne in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 22 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Emad Ahmad.