Mujhe Sajjad Aur Masjood Donoon Per Bharosa Hai

مجھے سجاد اور مسجود دونوں پر بھروسا ہے

مجھے سجاد اور مسجود دونوں پر بھروسا ہے

صنم خانوں میں جو جھک جائے میرا دل نہیں ہو گا

اگر کچھ خواب ہیں تو چھوڑ کر آنا ہمارے گھر

تمہیں اجڑے ہوئے لوگوں سے کچھ حاصل نہیں ہوگا

خدا گر چاہ دیکھے گا تو عُقدے کھول ڈالے گا

نہیں گر شرحِ صدر اب تک تو دل قابل نہیں ہو گا

مقدر نے کسی کے ساتھ، تجھ سے دور رکھا ہے

تو وہ رستہ نہیں ہوگا، تو تُو منزل نہیں ہو گا

عمومی یہ کہ مَیں دُنیا کے ہر بندے سے عاجز ہوں

خصوصی یہ کہ وہ اس قول میں داخل نہیں ہو گا

عماد احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(404) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Emad Ahmad, Mujhe Sajjad Aur Masjood Donoon Per Bharosa Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 22 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Emad Ahmad.